HOW TO SHOP

1 Login or create new account.
2 Review your order.
3 Payment & FREE shipment

If you still have problems, please let us know, by sending an email to support@website.com . Thank you!

SHOWROOM HOURS

Mon-Fri 9:00AM - 6:00AM
Sat - 9:00AM-5:00PM
Sundays by appointment only!

بچوں کا حج

جواب: جی ہاں۔چُنانچِہ حضرت سیِدُناعبد اللّٰہ بن عبّاس رضی اللہ تعالٰی عنھما فرماتے ہیں کہ سرکار دوعالَم صلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم مقامِ رَوْحامیں ایک قافلے سے ملے تو فرمایاکہ یہ کون لوگ ہیں؟ اُنہوں نے عَرْض کیا کہ ہم مسلمان ہیں، پھر اُنہوں نے عَرْض کیا :آپ کون ہیں ؟ فرمایا: اللہ عزوجل کا رسول ہوں۔ ان میں سے ایک خاتون نے بچے کو اُوپر اُٹھا کر پوچھا :کیا اس کا بھی حج ہو جائے گا؟ فرمایا: ہاں اور تجھے بھی اس کا ثواب ملے گا۔ (مسلم ص ۶۹۷ حدیث ۱۳۳۶)
جواب: جی نہیں۔حج فرض ہونے کے شرائط میں سے ایک شرط‘‘بالِغ ہونا’’بھی ہے چُنانچِہ میرے آقا اعلیٰ حضرت امام احمد رضا خان علیہ رحمۃ الرحمٰن فرماتے ہیں:بچے پر(حج) فرض نہیں،(اگر)کرے گا تو نَفْل ہوگا اور ثواب اُسی (یعنی بچے ہی) کے لئے ہے، باپ وغیرہ مُرَبی تعلیم و تربیت کا اَجر پائیں گے ۔پھر (جب)بعدِ بُلوغ شرطیں جَمْعْ ہوں گی اِس پر حج فرض ہوجائے گا، بچپن کا حج کِفایت نہ کریگا ۔ (فتاویٰ رضویہ مخرجہ ج۱۰ ص۷۷۵)
جواب: اِس اعتبار سے بچوں کی دوقسمیں ہیں: ۱۔سمجھدار: جو پاک اور ناپاک ، میٹھے اور کڑوے میں تمیز کر سکتا ہو مَعرِفت(یعنی پہچان) رکھتا ہو کہ اسلام نَجات کا سبب ہے( ارشاد الساری حاشیہ مناسک ص۳۷)۲۔ ناسمجھ: جو مذکورہ (یعنی بیان کردہ)سمجھ نہ رکھتا ہو۔
جواب: جی ہاں۔سمجھ وال(یعنی سمجھدار)بچہ خود اَفعالِ حج کرے ،رَمی وغیرہ بعض باتیں(اُس بچے نے) چھوڑ (بھی)دِیں تو اُن (کے چھوڑنے)پر کفّارہ وغیرہ لازِم نہیں۔(بہارشریعت ج۱ ص۱۰۷۵)
جواب: حضرتِ علّامہ علی قاری علیہ رحمۃ اللہ الباری فرماتے ہیں: جو اَفعال سمجھ دار بچہ خود کرسکتا ہو اس میں کسی کو نائب بنانا دُرُست نہیں ہے اور جو خود نہیں کرسکتا اُن میں نائب بنانا دُرُست ہے مگر طواف کے بعد کی دورَکعتیں اگربچہ خود نہ پڑھ سکے تو کوئی دوسرا اس کی طرف سے ادا نہیں کرسکتا۔

This is just a simple notice. Everything is in order and this is a simple link.

SIGN IN YOUR ACCOUNT TO HAVE ACCESS TO DIFFERENT FEATURES

CREATE ACCOUNT

FORGOT YOUR DETAILS?

TOP