HOW TO SHOP

1 Login or create new account.
2 Review your order.
3 Payment & FREE shipment

If you still have problems, please let us know, by sending an email to support@website.com . Thank you!

SHOWROOM HOURS

Mon-Fri 9:00AM - 6:00AM
Sat - 9:00AM-5:00PM
Sundays by appointment only!

حاضری کےمدنی پھول

حج وعمرے کے اِحرام کھولنے کے وَقْت سر مونڈانے کے مُتعلّق دو فرامینِ مصطَفٰےصلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم مُلاحَظہ فرمایئے

  1. مِنبرِ اطہر کے قریب دُعا مانگئے
  2. جنَّت کی کیاری میں (یعنی جو جگہ منبرو حُجرۂ منوَّرہ کے درمِیان ہے، اسے حدیث میں ‘‘جنّت کی کیاری’’ فرمایا) آکر دو رَکعَت نَفل غیرِ وَقتِ مکروہ میں پڑھ کر دُعا کیجئے۔
  3. جب تک مدینۂ طیِّبہ کی حاضِری نصیب ہو، ایک سانس بیکار نہ جانے دیجئے۔
  4. ضَروریات کے سوا اکثر وَقت مسجِدُالنَّبَوِیِّ الشَّریف میں باطہارت حاضِر رہئے،نَماز وتِلاوت و ذِکرودُرُود میں وَقت گزاریئے، دنیا کی بات توکسی بھی مسجِدمیں نہ چاہیے نہ کہ یہاں۔
  5. مدینۂ طیِّبہ میں روزہ نصیب ہو خُصُوصاً گرمی میں تو کیا کہنا کہ اس پر وعدۂ شَفاعت ہے۔
  6. یہاں ہر نیکی ایک کی پچاس ہزار لکھی جاتی ہے، لہٰذا عبادت میں زیادہ کوشش کیجئے،کھانے پینے کی کمی ضَرور کیجئے اور جہاں تک ہوسکے تصدُّق (یعنی خیرات) کیجئے خُصُوصاً یہاں والوں پر۔
  7. قراٰنِ مجید کا کم سے کم ایک ختم یہاں اورایک حَطیمِ کعبۂ معظمہ میں کر لیجئے۔
  8. روضۂ انور پر نظر عبادت ہے جیسے کعبۂ معظمہ یا قراٰنِ مجید کا دیکھنا تو ادب کے ساتھ اِس کی کثرت کیجئے اور دُرُود و سلام عرض کیجئے
  9. پنجگانہ یا کم از کم صبح ، شام مُواجَہَہ شریف میں عرضِ سلام کے لیے حاضر ہوں۔
  10. شہر میں خواہ شہر سے باہَر جہاں کہیں گنبدِ مبارَک پر نظر پڑے، فوراً دست بستہ اُدھر منہ کرکے صلوٰۃُ و سلام عرض کیجئے، بے اِس کے ہرگز نہ گزریئے کہ خلافِ ادب ہے۔
  11. حتَّی الوسع کوشِش کیجئے کہ مسجِد اوّل یعنی حُضُورِ اقدس صلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم کے زمانے میں جتنی تھی اُس میں نَماز پڑھئے اور اُس کی مِقدار100 ہاتھ طُول (لمبائی) اور100ہاتھ عرض (چوڑائی)(یعنی تقریباً 50×50گز)ہے اگرچِہ بعد میں کچھ اضافہ ہوا ہے، اُس(یعنی اضافہ شدہ حصّے) میں نَماز پڑھنا بھی مسجِدُالنَّبَوِیِّ الشَّریف ہی میں پڑھنا ہے۔
  12. روضۂ انور کا نہ طواف کیجئے، نہ سجدہ، نہ اتنا جُھکنا کہ رُکوع کے برابر ہو۔ رسولُ اللہ صلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم کی تعظیم اُن کی اِطاعت میں ہے۔(ماخوذاًبہارِ شریعت ج اول ص ۱۲۲۷ تا ۱۲۲۸)

This is just a simple notice. Everything is in order and this is a simple link.

SIGN IN YOUR ACCOUNT TO HAVE ACCESS TO DIFFERENT FEATURES

CREATE ACCOUNT

FORGOT YOUR DETAILS?

TOP